بچوں کی گیس قبض ایسے ختم جیسے تھی ہی نہیں

140

چھوٹے بچے کی صحت کا دارو مدار اصل میں ماں کے اوپر ہوتاہے ۔ کیونکہ ماں کے دودھ کے ذریعےبچے کو وہ سب کچھ مل رہا ہے جس کی اسے ضرووت ہوتی ہے ۔ اگر ماں نے ایسی بادی غذا کھالی جس سے بچے کے پیٹ میں گیس ہوگئی ہے تو یہ معدے میں تکلیف کا بھی سبب بنتی ہے ۔ بچے کے پیٹ میں گیس کی اصل وجہ ہی ماں کے کھانے سے ہوتی ہے اور مروڑ پڑنے کے ساتھ ساتھ پیٹ میں شدید تکلیف ہوتی ہے ۔ قبض اور گیس کی وجہ سے بچہ بار بار روتاہے کیونکہ وہ اس وقت شدید درد محسوس کررہا ہوتاہے ۔ بچے کے پیٹ کی گیس سے چھٹکارے کے لیے آزمودہ ٹوٹکا یہ ہے

اس ٹوٹکے کو بنانے کیلئے ہمیں چاہیے
شہد : آدھاچائے کاچمچ
دانہ الائچی : ایک عدد
سونف : دو دانے
پانی : ایک گلاس

ترکیب وطریقہ استعمال
پانی میں تمام اجزاء کو ڈال کر اچھی طرح ابال لیں ۔ جب پانی آدھا کپ رہ جائے تو اس کو ٹھنڈا کرکے ایک چائے کاچمچ بچے کو پلا دیں ۔ دن میں دو بار عمل دوہرائیں ۔ اس سے بچے کوپیٹ میں گیس اور بد ہضمی کا مسئلہ ختم ہو جائے گا ۔ یہ عمل دو دن تک جاری رکھیں ۔ اس سے ہاضمہ بھی درست ہوجائے گااور یہ بچے کی گیس کی شکایت کیلئے بہت فائدہ مند ہے ۔
ایسی مائیں جو چھوٹے بچوں کو دودھ پلاتی ہیں اس کو اپنی غذا میںگوبھی اور دال ماش کا استعمال نہیں کرنا چاہیے کیونکہ خوراک اصل میں بچے پر اثر انداز ہوتی ہے ۔ زیادہ تعداد میں خشک میوہ جات اور نڈے استعمال کرنے سے بچے کو الرجی ہوجاتی ہے ، چاکلیٹ اور کیفین کےبھی استعمال سے پرہیز کریں ۔دودھ پلانے کے بعد بچے کو کندھے کے ساتھ لگا کر ضرور ڈکار لگوائیں تاکہ پیٹ میں موجود دودھ ہضم ہو جائے ۔
پیٹ میں گیس کا مسئلہ تین ماہ کے بچے کی عمر سے ہی شروع ہو جاتاہے ۔ ہر مہینے کے بعد فیڈر کی نپل ضرور بدلیں تاکہ بچے کی صحت نہ خراب ہو پائے ۔ ہفتے میں ایک مرتبہ زیتون کے تیل کےساتھ بچے کے پیٹ کی مالش کریں تاکہ بچے کی آنتیں نرم رہیں۔

کیٹاگری میں : صحت