ہاتھوں پر ان رگوں کا نمودار ہونا خطرے کی علامت؟

1,549

کہتے ہیں کہ جب انسان بوڑھا ہونے لگتا ہے تو اس کی جلد نازک ہو جاتی ہے اور ساتھ ہی پتلی بھی یہ وجہ ہے کہ عمر کے ساتھ جلد ڈھلکنے لگتی ہے، اور ہاتھوں اور پاؤں پر رگیں نمودار ہونے لگتی ہیں، لیکن اکثر دیکھنے میں آیا ہے کہ یہ رگیں جوان لوگوں کے ہاتھوں اور پاؤں پر بھی موجود ہوتی ہیں.تو اس بات سے یہ واضح ہوتا ہے کہ اس مسئلے کا بڑھاپے یا جوانی سے کوئی تعلق نہیں، ہاں عمر کے ساتھ جلد میں تبدیلیاں ضرور آتی ہیں، مگر عمر اس مسئلے کی اصل وجہ نہیں.دراصل ہماری جلد کے نیچے کئی تہیں موجود ہوتی ہیں اور نچلی تہہ اگر پتلی ہو تو بھی یہ رگیں زیادہ واضح ہوتی ہیں اس کے علاوہ جو لوگ باقائدگی سے ورزش کرتے ہیں ان کے ہاتھ اور پاؤں میں کھچاؤ کے باعث بھی یہ رگیں نظر آنے لگتی ہیں.اس کے علاوہ جلد کی رنگت بھی اس کی ایک بہت بڑی وجہ ہے، جن افراد کی جلد کی رنگت گہری( ڈارک) ہو ان کی رگیں زیادہ واضح نہیں ہوتیں اس کے بر عکس وہ افراد جن کی رنگت ہلکے رنگ کی یا زردی مائل ہوتی ہے ان کی رگیں زیادہ واضح ہوتی ہیں.
پر سوال یہ ہے کہ کیا ان کا واضح ہونا خطرے کی علامت ہے؟
کچھ لوگوں کا سوچنا ہے کہ رگوں کا پھولنا جسم میں شوگر کی زیادتی کی علامت ہے، اگر رگیں پھولنے کے ساتھ نیچے دی گئی تمام علامات آپ اپنے اندر محسوس کریں تو یقینا یہ فکر کی بات اور آپ فوری طور پر اپنے معالج سے رجوع کریں.اگر آپ کی رگیں ضرورت سے زیادہ لال ہوں اور ہاتھ لگانے پر درد محسوس ہو، اس کے علاوہ اگر جسم پر نیلے اور لال دھبے نمودار ہونے لگیں تو فوری طور پر اپنا معائنہ کروائیں.
اس کے علاوہ ان چیزوں سے احتیاط برتیں جن کی وجہ سے یہ مسئلہ درپیش آنے کے امکانات بڑھتے ہیں، مثلاً وزن میں لانے کی کوشش کیجئے ، چینی اور نمک کا استعمال حد ممکن کم کیجئے، اس کے علاوہ دن بھر میں ہلکی پھلکی ورزش ضرور کیجئے:.

کیٹاگری میں : دلچسپ و عجیب